کبھی سوچا نہ تھا

تجھ سے ملنے کے بعد
کوئی لمحہ تو ایسا بتاو
جس لمحہ میں نے
دل کی مندر میں
کسی دیوی کی مانند
تجھے پوجا نہ تھا
مگر تم ایسی ہوگی
کبھی سوچا نہ تھا
لاکھ کہا تجھ سے
گھونگٹ تونے مگر
تب تو الٹا نہ تھا
لیکن پھر جو دیکھا
وہ نظرکا کوئی دھوکا نہ تھا
جبھی تو میں نے
اشکوں کو اپنے روکا نہ تھا
تم ایسی ہوگی
کبھی سوچا نہ تھا
کہ گھونگٹ الٹنے کی
اجازت تو تونے دے دی مگر
جس نے گھونگٹ اٹھانا تھا
وہ ہاتھ میرا نہ تھا
مگر اس میں بھی شاید
قصور تیرا نہ تھا
کہ میرے پاس ہی
تیری انگلی میں سجانے کو
کوئی قیمتی پتھر
کوئی ہیرا نہ تھا
از " محمد یاسر علی "

<<< پچھلا صفحہ اگلا صفحہ >>>

اگر آپ کے کمپوٹر میں اردو کی بورڈ انسٹال نہیں ہے تو اردو میں تبصرہ کرنے کے لیے ذیل کے اردو ایڈیٹر میں تبصرہ لکھ کر اسے تبصروں کے خانے میں کاپی پیسٹ کرکے شائع کردیں۔


اپنی قیمتی رائے سے آگاہ کریں

اہم اطلاع :- غیر متعلق,غیر اخلاقی اور ذاتیات پر مبنی تبصرہ سے پرہیز کیجئے, مصنف ایسا تبصرہ حذف کرنے کا حق رکھتا ہے نیز مصنف کا مبصر کی رائے سے متفق ہونا ضروری نہیں۔

میرا خواب، پیار، امن، مساوات اور انسانیت کا ترجمان نفرت، دہشتگردی، طبقاتی تفریق اور فرقہ پرستی سے پاک پاکستان " محمد یاسرعلی "

www.yasirnama.blogspot.com. Powered by Blogger.